Noshi Gilani – کبھی ہم بھیگتے ہیں چاہتوں کی تیز بارش میں


کبھی ہم بھیگتے ہیں چاہتوں کی تیز بارش میں
کبھی برسوں نہیں ملتے کسی ہلکی سی رنجش میں
تمہی میں دیوتاؤں کی کوئی خُو بُو نہ تھی ورنہ
کمی کوئی نہیں تھی میرے اندازِ پرستش میں

یہ سوچ لو پھر اور بھی تنہا نہ ہو جانا
اُسے چھونے کی خواہش میں اُسے پانے کی خواہش میں

بہت سے زخم ہیں دل میں مگر اِک زخم ایسا ہے
جو جل اُٹھتا ہے راتوں میں جو لَو دیتا ہے بارش میں

Ghazal by Noshi Gilani

21 تبصرے

  1. IQBAL SHEIKH said,

    جون 10, 2012 at 4:01 صبح

    super,super n super

  2. shazia naseem said,

    جون 9, 2012 at 6:59 شام

    i like it

  3. Sad Poetry said,

    اپریل 21, 2012 at 5:54 شام

    Awesome Poetry yar… Just great!

  4. Farhan khokhar said,

    فروری 26, 2012 at 1:26 شام

    Awesome

  5. mazhar saleem said,

    فروری 26, 2012 at 7:27 صبح

    nice good

  6. shaista said,

    فروری 24, 2012 at 4:39 شام

    Noshi Gilani

    تم سے کچھ نہیں کہنا

    ہم نے سوچ رکھا ہے
    چاہے دل کی ہر خواہش
    زندگی کی آنکھوں سے اشک بن کے
    بہہ جائے
    چاہے اب مکینوں پر
    گھر کی ساری دیواریں چھت سمیت گر جائیں
    اور بے مقدر ہم
    اس بدن کے ملبے میں خود ہی کیوں نہ دب جائیں
    تم سے کچھ نہیں کہنا
    کیسی نیند تھی اپنی،کیسے خواب تھے اپنے
    اور اب گلابوں پر
    نیند والی آنکھوں پر
    نرم خو سے خوابوں پر
    کیوں عذاب ٹوٹے ہیں
    تم سے کچھ نہیں کہنا
    گھر گئے ہیں راتوں میں
    بے لباس باتوں میں
    اس طرح کی راتوں میں
    کب چراغ جلتے ہیں،کب عذاب ٹلتے ہیں
    اب تو ان عذابوں سے بچ کے بھی نکلنے کا راستہ نہیں جاناں!
    جس طرح تمہیں سچ کے لازوال لمحوں سے واسطہ نہیں جاناں!

    ہم نے سوچ رکھا ہے

    تم سے کچھ نہیں کہنا

  7. shaista said,

    فروری 24, 2012 at 4:38 شام

    عالم ِ محبت میں
    اِک کمال ِ وحشت میں
    بے سبب رفاقت میں
    دُکھ اُٹھانا پڑتا ہے
    تتلیاں پکڑنے کو
    دور جانا پڑتا ہے
    ==========

  8. turbo said,

    فروری 20, 2012 at 3:18 شام

    Na kaghaz ki taqqat hay na klum kam dati hay
    Bs 1 saans hi baqi hay jo tera naam lati hay

    (By Turbo)

  9. ASIF ALI GHUMRO said,

    فروری 19, 2012 at 10:24 صبح

    ek dum superbbbbbbbbbbbbbbbbb

  10. Pari said,

    فروری 13, 2012 at 4:06 شام

    Mind blowing

  11. Shahzad Anwer said,

    فروری 11, 2012 at 10:50 صبح

    AAAAAAAAAAAAlllllllllllaaaaaaaaaaaaaaaa Poetry Wah

  12. IQBAL SHEIKH said,

    فروری 7, 2012 at 2:53 صبح

    zabardast

  13. IQBAL SHEIKH said,

    فروری 7, 2012 at 2:50 صبح

    zabadast

  14. shehla zia said,

    فروری 6, 2012 at 10:46 صبح

    bbbbbbbbbbbbeautiful

  15. fair friend said,

    فروری 2, 2012 at 5:14 صبح

    one of the most beautifull lines written by Noshi Gilani

  16. Shani said,

    فروری 1, 2012 at 12:52 شام

    Good ay

  17. kulkalam said,

    فروری 1, 2012 at 7:16 صبح

    اچھا انتخاب ہے

  18. umer rasheed said,

    جنوری 31, 2012 at 4:48 شام

    boht alllllaaa

  19. sevi said,

    جنوری 30, 2012 at 2:55 شام

    kitny khoobsorat hoty hein yeh shair log b,bilkul gulaab ki maanind,k alfaaz hoty hein khushbo ki maanind.

  20. ali liaqat said,

    جنوری 30, 2012 at 5:49 صبح

    very nice potrey

  21. hathurwala said,

    جنوری 29, 2012 at 7:58 صبح

    bahut khoob. kyaa baat hai


Leave a Reply / Ap ka pegham

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: